What important evidence did the government find against Shahbaz Sharif?

Advertisement

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے دعویٰ کیا ہے کہ شہباز شریف کیخلاف کک بیکس کے شواہد مل گئے، ان کے ملازم کے اکاونٹ میں 6 ارب روپے کی رقم منتقل کی گئی، ان کی وزارت اعلیٰ کے دوران خاندانی دولت میں ہزاروں گنا اضافہ ہوا۔

نجی نیوز چینل سما نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ شہباز شریف کی وزارت اعلیٰ کے دور میں ان کی خاندانی دولت میں ہزاروں گنا اضافہ ہوا، ٹھیکیداروں کی جانب سے براہ راست کک بیکس کی رقوم ان کے اکاونٹس میں بھیجنے کے شواہد مل گئے۔ان کا کہنا ہے کہ اب 90کی دہائی والے حالات نہیں رہے، ڈیل کی باتیں درست ہیں نہ ہی ملزم قانون کے شکنجے سے بچ سکیں گے۔ انہوں نے شہباز شریف کو ٹی ٹی مافیا کا سرغنہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ جب 70 ہزار کے ملازم کے اکاونٹ میں 6 ارب روپے آئیں گے تو شہباز شریف سے پوچھا تو جائے گا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے کہا ہے کہ لاک ڈاؤن سے معاشی بدحالی آتی ہے،مغرب کی اندھی تقلید نہیں کریں گے، کرونا وائرس ساری دنیا میں پھیلا ،کورونا وائرس نےپھیلناہے اور ہمیں اس وباکے ساتھ چلنا ہے،کورونا ہمارے قابو سے باہر نہیں ہے، ہم نے لوگوں کو روزگار دینا ہے اور معاشی بدحالی کو روکنا ہے، ہم نے پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا ریلیف پیکج دیا،جب تک حفاظتی تدابیر پر عمل کرتے رہیں گے پاکستان میں تباہی نہیں آئے گی، قوم بن کر کام کریں گے تو کامیابی ملے گی۔اسد عمر نے قومی اسمبلی کے اجلاس میں کچھ تقاریر سنجیدہ تھیں اور اکثر تقاریر پر میں جگت بازی کے سوا کچھ نہیں کیا گیا، کرونا وائرس ساری دنیا میں پھیلا ہے، امریکہ جیسے ممالک میں بھی یہ پھیلا، لاک ڈاؤن میں تھوڑی سے نرمی کی، یہ دوبارہ پھیلنا شروع ہو گیا ہے، اس وباء کے ساتھ چلنا ہے، اس نے پھیلنا ہے،پاکستان کی آبادی کا دو تہائی حصہ ایک کروڑ80لاکھ خاندان کاروزگار متاثر ہوا،لاک ڈاؤن سے معاشی بدحالی آتی ہے،اس سے لوگوں کو بچانا ہے،مغرب کی اندھی تقلید نہیں کریں گے،پاکستان کے اندر عالمی معیار کے ماہرین موجود ہیں، ان کی مدد سے وباء پر قابو پانے کیلئے کام کر رہے ہیں، آج وباء بڑھ ضرور گئی ہے لیکن ہمارے قابو سے باہر نہیں ہے۔اسدعمرنےکہاکہ ہم نےلوگوں کوروزگاردیناہےاور معاشی بدحالی کوروکناہے،صحت کےنظام میں بہتری اورصلاحیت بڑھا رہے ہیں، پاکستان میں آج 70لیبارٹریز کروناٹیسٹ کے لئے قائم کی ہیں،ساڑھے تیرہ ہزار سے زائد کرونا کے ٹیسٹ کر رہے ہیں، 1000 وینٹی لیٹرز کا اضافہ کررہے ہیں،ایک لاکھ صحت کے ورکرز کو حفاظتی سامان درست طرح سے استعمال کرنے کی تربیت دے رہے ہیں، 5ہزارجے سی یو کے ڈاکٹرز اور ورکرز کی تربیت کر رہے ہیں، جب تک حفاظتی تدابیر پر عمل کرتے رہیں گے پاکستان میں تباہی نہیں آئے گی۔

Source Link

Advertisement
Advertisement